ملائیشیا: سزائے موت ختم کرنے کا اعلان

  • جمعہ, 12 اکتوبر 2018 13:19

شیعہ نیوز(پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) کوالا لمپور: ملائیشیا کی حکومت نے سزائے موت ختم کرنے کا اعلان کردیا جس کے بعد پارلیمنٹ میں قانون کی منظوری تک تمام قیدیوں کی سزائے موت پر عملدرآمد روک دیا گیا ہے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق ملائیشیا کے وزیر قانون داتوک لیووونی نے کہا ہے کہ سزائے موت پر پابندی کے لیے قانون اسمبلی میں پیش کرنے کا فیصلہ کیا ہے، 15 اکتوبر کو ہونے والے پارلیمانی اجلاس میں یہ بل پیش کردیا جائے گا۔

سزائے موت ختم کرنے کے اعلان کے بعد تمام قیدیوں کی سزائے موت پر عملدرآمد روک دیا گیا ہے ان کے لیے دیگر مناسب سزائیں کرائی جائیں گی جن میں زیادہ سے زیادہ سزا عمر قید ہوگی۔

واضح رہے کہ ملائیشیا میں قتل، اغوا، ملک سے بغاوت اور منشیات فروشی کی خریدوفروخت کے جرائم میں سزائے موت کا قانون ہے تاہم اب حکومت کسی بھی طرح کے جرم میں سزائے موت کا قانون ختم کردے گی اور ان کی جگہ دوسری سزائیں دی جائیں گی۔

حال ہی میں ایک آسٹریلوی خاتون کو بھی منشیات کی اسمگلنگ میں سزائے موت سنائی گئی تھی اور ملائیشیا پر آسٹریلوی خاتون کو معاف کرنے اور رہائی کے لیے آسٹریلوی حکومت سمیت انسانی حقوق کی متعدد تنظیموں کا دباؤ ہے۔

یاد رہے کہ ملائیشیا میں 1200 افراد کو موت کی سزا سنائی گئی ہے قانون اسمبلی میں منظور ہونے کے بعد ان کی سزاؤں کا تعین کیا جائے گا۔

ملائیشیا میں سوئیڈن کے سفیر نے ملائیشیا کی حکومت کے اس اقدام کو سراہتے ہوئے کہا ہے کہ ملائیشیا کی حکومت نے ایک مثال قائم کی ہے جبکہ ایمنسٹی انٹرنیشنل نے بھی ملائیشیا کی حکومت کے فیصلے کو مثبت قرار دیا ہے۔

Leave a comment

Make sure you enter the (*) required information where indicated. HTML code is not allowed.