پاکستانی شیعہ خبریںہفتہ کی اہم خبریں

کمزور خارجہ پالیسی دہشت گردی کا بنیادی سبب ہے ۔آغا سید حامد علی شاہ موسوی

شیعہ نیوز:سپریم شیعہ علماء بورڈ کے سرپرست اعلیٰہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا ہے کہ کمزور خارجہ پالیسی دہشت گردی کا بنیادی سبب ہے حکومتیں نفرتوں پر سرمایہ کاری کرنیو الے ممالک کی مذمت کرنے میں بے بس رہیں، جب تک نیشنل ایکشن پلان پر عملدر آمد میں نقائص دور نہیں ہوں گے پشاور اور سبی جیسے سانحات ہوتے رہیں گے۔

بلوچستان میں پاک فوج اور پاکستان سے نفرت پیدا کرنے کیلئے منظم سازش جاری ہے، جن ملکوں کا دفاع کمزور ہو جائے وہ کتنے ہی ترقی یافتہ کیوں نہ ہوں حشر یو کرین جیسا ہو تا ہے،سانحہ کوچہ رسالدار کے زخمیوں اور شہداء کے لواحقین کی حالت زارسے حکومتی بے اعتنائی افسوسناک ہے، پاکستان کی گرے لسٹ میں برقرار رکھنے کے فیصلے کے پیچھے بھارت ہے پاکستان دشمنی میں امریکہ بھی کسی سے پیچھے نہیں۔تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کے قائد آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہاکہ پاکستان کی بدقسمتی یہ رہی کہ پاکستان کے حکمران دوست دشمن کی پہچان نہ کرسکے پاکستان کا سب سے بڑا دشمن بھارت ہے اور حضرت علی ابن ابی طالبؑ کے فرمان کے مطابق تین دوست ہیں یعنی دوست دوسرا دوست کا دوست اور تیسرا دشمن کا دشمن اسی طرح تیں دشمن ہیں ایک دشمن، دوسرا دشمن کا دوست اور تیسرا دوست کا دشمن، اگر پاکستان کی خارجہ پالیسی اور دوست دشمن کا تعین تعلیمات مرتضوی کے مطابق کیا جائے تو وطن عزیز سفارتی میدانوں میں ان ہزیمتوں سے بچ جائے جن کا اسے فیٹف اور دیگر محاذوں پر رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ گذشتہ پون صدی میں خارجہ پالیسی میں حکمرانوں کی غلطیوں کا خمیازہ قوم نے پاکستان کے دولخت ہونے کی صورت میں بھگتا محکم و مستحکم خارجہ پالیسی بنا کرہی پاکستان کو امن کا گہوارہ بنایا جا سکتا ہے اور ترقی کی راہ پر گامزن کیا جا سکتا ہے۔آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا کہ امام زین العابدین علیہ السلام کمال بندگی پر فائز تھے اسی لئے سجدہ گزاروں کے سردار اور عبادت گزاروں کی زینت کا یگانہ اعزاز پایاآپ نے دعاؤ ں کے ذریعے تبلیغ کا منفرد انداز اختیار کیا اور عزاداری کی بنیاد رکھ کر تا ابد ظالموں کو شکست دینے کا پرامن ترین طریقہ سکھلا دیا، امام زین العابدین ؑ کی دعاؤں کا مجموعہ صحیفہ سجادیہ اور رسالۃ الحقوق ہر دور کے محروموں و مظلوموں کی رہنمائی کا فریضہ سر انجام دیتے رہیں گے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button