مضامین

دفاع پاکستان کونسل یا ملک دشمن عناصر کا اتحاد؟؟؟

پاکستان کا قیام سنہ ۴۷ ء میں وجود میں آیا تھا اور یہ قیام کسی نے پلیٹ میں رکھ کر نہیں دیا تھا بلکہ پاکستان کے غیرت مند عوام جن میں ملت جعفریہ سر فہرست تھی اور یہ بات کسی سے ڈھکی چھپی نہیں کہ قیام پاکستان کے وقت ملت جعفریہ نے کس طرح اپنے مال ومتاع سے پاکستان کے قیام کے لئے عملی جد وجہد کی تھی ۔

قیام پاکستان کے چند برس گذر جانے کے بعد عین اس وقت کہ جب پاکستان کی حکومت ایک ملعون اور ناپاک جنرل ضیاء الحق کے ہاتھ لگی ملک بھر میں دہشت گردی کا بازار گرم ہو گیا اگر مردود ضیاء الحق کے دور سے لے کر اب تک دہشت گردی کی وارداتوں میں بے گناہ شیعہ اور بریلوی مسلمانوں کو قتل عام دیکھا جائے تو قریباً ساٹھ ہزار بے گناہ اور معصوم افراد دہشت گردی کی بھینٹ چڑھا دئیے گئے اور یہ سب صرف اور صرف سنہ ۸۰ء کی دہائی میں اس وقت شروع ہوا جب پاکستان کی حکومت دہشت گردوں کے سر براہ ضیاء الحق ملعون نے سنبھالی ۔
قارئین ! آپ کو یاد ہو گا کہ یہی وہ ظالمانہ دور تھا کہ جب جہاد کے نام پر دہشت گرد گروہوں کو پروان چڑھایا گیا کہ اور ان دہشت گرد گروہوں کا مقصد پاکستان کے اندر پاکستان کے باسیوں کا قتل عام کرنا تھا ،ملعون ضیاء الحق کے دورمیں پروان چڑھنے والی دہشت گرد جماعتوں میں کالعدم سپاہ صحابہ،کالعدم لشکر جھنگوی سمیت جماعۃ الدعوۃ اور حرکۃ المجاہدین سمیت متعدد دہشت گرد گروہ ہیں کہ جنہوں نے کبھی جہاد افغانستان کے نام پر اور کبھی جہاد کشمیر کے نام پر مملکت خداداد پاکستان میں رہنے والے معصوم اور بے گناہ شیعہ اور بریلوی مسلمانوں کا خون اس لئے بہایا کہ شیعہ و سنی مسلمان متحد ہو کر رہتے ہیں اور یہی بات امریکی و اسرائیلی ایجنٹوں اور ان کے نمک خواروں کو پسند نہ تھی ۔
آج پاکستان ایک مرتبہ پھر دہشت گردوں کے ہاتھوں میں ہے اور پاکستان دہشت گردی کی لپیٹ میں ہونے کے ساتھ ساتھ انہی دہشت گردوں کے ہاتھوں میں آرہاہے کہ جنہوں نے گذشتہ چالیس برس سے ہزاروں پاکستانیوں کو موت کی نیند سلا دیا ہے ۔
حیرت انگیز بات ہے کہ آج پاکستان میں ایک مرتبہ پھر خون کی ہولی کھیلنے کے لئے منظم منصوبہ بندی کی جا رہی ہے اور دفاع پاکستان کونسل کے نام پر تمام دہشت گرد اور کالعدم دہشت گرد گروہوں کو جمع کیا جا رہا ہے کہ جن کے ہاتھ پاکستان کے باسیوں کے پاکیزہ خون سے رنگین ہو چکے ہیں ،آج پاکستان کے دفاع کی بات وہی ناصبی کالعدم دہشت گرد گروہ کر رہے ہیں کہ جنہوں نے گذشتہ چالیس برس میں ہزاروں بے گناہ شیعہ و بریلوی مسلمانوں کو موت کی نیند سلا دیا ہے ۔
حیرت انگیز بات ہے کہ دفاع پاکستان کے نام پر تمام کالعدم دہشت گرد گروہ جمع کئے جا رہے ہیں تا کہ ایک مرتبہ پھر پاکستان کے بے گناہ اور معصوم بے گناہ عوام کو دہشت گردی کی بھینٹ چڑھایا جائے ۔
قارئین!اس سے بھی بڑھ کر حیرت انگیز اور عجیب بلکہ حیرت انگیز نہ ہی کہا جائے تو اچھا ہو گا کہ پاکستان کے اندر ایک نام نہاد اسلامی جماعت یعنی جماعت اسلامی کہ جس نے کبھی بھی پاکستان کے مظلوموں کی بات نہیں کی آج ایک مرتبہ پھر کالعدم دہشت گرد گروہوں کی سر براہی کر رہی ہے اور اس بات کا ثبوت دے رہی ہے کہ پاکستان میں تمام دہشت گردوں کی سربراہ جماعت ،جماعت اسلامی ہی ہے کہ جس نے ماضی میں بھی شیعہ و سنی مسلمانوں کے خون سے ہولی کھیلی اور آج ایک مرتبہ پھر یہی جماعت اسلامی شیعہ و بریلوی مسلمانوں کے خون سے ہولی کھیلنے اور پاکستان کو عدم استحکام کا شکار کرنے کیلئے تمام کالعدم دہشت گرد گروہوں بشمول کالعدم دہشت گرد سپاہ صحابہ،(ملت اسلامیہ،اہلسنت والجماعت اور سنی ایکشن کمیٹی)،کالعدم دہشت گرد گروہ لشکر جھنگوی،کالعدم دہشت گرد گروہ جماعۃ الدعوۃ،کالعدم دہشت گرد گروہ حرکۃ المجاہدین سمیت چالیس سے زائد دہشت گرد گروہوں کی سربراہی کر رہی ہے ۔
کیا یہ دفاع پاکستان ہے؟ یا ۔۔۔پاکستان کے خلاف ایک سازش؟۔۔۔فیصلہ آپ کا

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button