پاکستانی شیعہ خبریں

سانحہ کوئٹہ، عوام خود قیام کرکے دشمنوں کا مقابلہ کریں، علامہ عابد حسینی

ساتحہ کوئٹہ کے حوالے سے آج تحریک حسینی پاراچنار کے مرکزی دفتر میں علاقے کے عمائدین اور تنظیموں کا ایک اہم اجلاس منعقد ہوا، اجلاس میں کوئٹہ میں شہید ہونے والے افراد کی مغفرت کے لئے دعا کی گئی اور انکے لواحقین کے ساتھ دلی ہمدردی کا اظہار کیا گیا۔ اجلاس سے تحریک حسینی کے سرپرست اعلٰی علامہ سید عابد حسین الحسینی، تحریک کے صدر مولانا منیر حسین، انچارج شعبہ تعلیم محمد تقی نے خطاب کیا۔ علامہ سید عابد حسین الحسینی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کوئٹہ میں ایک عرصے سے اہل تشیع کے ساتھ جو سلوک کیا جا رہا ہے، اس سے حکومت اور پاکستان کے طاقتور اداروں کا کردار مشکوک نظر آتا ہے۔ لہذا حکومت اور انٹیلی جینس ادارے اس سلسلے میں اپنا بھرپور کردار ادا کریں، تاکہ انکی روبہ زوال ساکھ کو پھر سے بحال کیا جاسکے۔
انہوں نے کہا کہ حکومت کی خاموشی بلکہ تعاون نہ ہوتا تو تکفیری کسی طرح بھی اپنے مقاصد میں کامیاب نہیں ہوسکتے۔ کیونکہ حکومتی ذمہ داروں نے بار بار اس بات کا اعتراف کیا ہے کہ بعض عرب ممالک دہشتگرد تنظیموں کو سپورٹ کر رہے ہیں۔ لیکن انہوں نے ابھی تک اس سلسلے میں ان مجرم حکومتوں کو کوئی تنبیہ نہیں کی، ورنہ سعودی عرب، قطر اور عرب امارات کونسی سپر پاور ہیں، یا ہمارے ملک سے طاقتور ہیں۔ انکا کہنا تھا کہ ابھی تک حکومت پاکستان نے سنجیدگی سے اپنا احتجاج ریکارڈ نہیں کروایا، تاکہ یہ ممالک اپنے ان گھناؤنے جرائم پر نظرثانی کریں۔

علامہ سید عابد حیسن الحسینی نے اہل تشیع سے بھی گزارش کی کہ کسی غیر کی نصرت اور مدد کا انتظار چھوڑ دیں اور پاراچنار کے مومنین کی مثال اپنے سامنے رکھ کر خود قیام کریں اور اپنے دفاع کو یقینی بنائیں۔ اس سے پہلے کہ سب کے سب مار دیئے جاو، یا وطن عزیز سے ملک بدر ہوجاؤ، اپنی مرضی سے بہت معمولی قربانی دو اور دشمن سے مقابلہ کرو۔ انہوں نے کہا کہ ایسے ہی سینکڑوں، ہزاروں کی تعداد میں سسک کر مرنے سے یہ بہتر ہوگا کہ کچھ افراد کی قربانی دو، مقابلہ کرو۔ کب تک مرتے رہوگے، اور مذمتی بیانات جاری کرنے یا احتجاجی مظاہرے کرنے تک محدود رہوگے۔ علامہ عابد الحسینی کا کہنا تھا کہ تمہارا دشمن تمہارے احتجاجات سے بھی محظوظ ہو رہا ہے۔ خدا کے لئے اٹھ کھڑے ہوں اور دشمنوں کی گردنیں جھکا کر اپنی گردنیں بلند کر دو۔

Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button