پاکستانی شیعہ خبریں

بھکر:وہابی دہشتگردو نے مسجد مہدویہ میں پندرہ کے قریب قرآن مجید کو آگ لگا کر شہید کر دیا

ضلع بھکر کی تحصیل دریا خان کے نواحی قصبہ پنج گراں میں مسجد مہدویہ میں پندرہ کے قریب قرآن مجید کو آگ لگا کر شہید کر دیا گیا۔ دن کے تقریبا دس بجے جب لوگوں نے مسجد سے دھواں اٹھتا دیکھا تو اندر جانے پر معلوم ہوا کہ قرآن مجید کو نذر آتش کر دیا گیا ہے۔ یاد رہے کہ اس قصبہ میں کوئی بھی گھرانہ عیسائی، یہودی یا ہندو نہیں ہے۔ اس سے پہلے اس مسجد میں سپاہ صحابہ کی طرف سے دھمکی آمیز خطوط بھی ملے تھے۔ یہ علاقہ کالعدم تنظیم سپاہ صحابہ کے رہنما قاری حمید کا آبائی گھر ہے۔ قاری حمید پہلے بھی ضلع بھکر میں ہونے والی فرقہ ورانہ دہشت گردی میں سرپرستی کرتا رہا ہے۔ کچھ عرصہ قبل اسی قصبہ میں علم حضرت عباس کو بھی نظر آتش کر دیا گیاتھا۔ علاقہ بھکر میں تسلسل کے ساتھ مقدسات اسلامی کی توہین کا سلسلہ جاری ہے اور انتظامیہ کسی ایک بھی واقعہ کی تفتیش نہ کر سکی ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ انتظامیہ کالعدم تنظیم سپاہ صحابہ سے خوفزدہ ہے اور انے خلاف کوئی بھی کاروائی سے گریزاں ہوتی ہے اور اسکی ایک اور وجہ پنجاب حکومت کے وزیر ثنااللہ کی سرپرستی بھی ہے۔ ان نام نہاد مسلمانوں نے اب اپنے مقاصد کے حصول کے لیے قرآن مجید کو بھی نہیں بخشا۔ پاکستانی عوام دنیا میں کہیں بھی شعار اسلام کی توہین پر سراپا احتجاج بن جاتی ہے اب دیکھتے ہیں کہ اپنے ہی ملک میں اس توہین قرآن پر کیا رد عمل آتا ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button