Uncategorized

ملک میں جاری شیعہ ٹارگٹ کلنگ کیخلاف لاہور پریس کلب کے باہر ایم ڈبلیو ایم کا احتجاجی مظاہرہ

شیعہ نیوز (اسٹاف رپورٹر)  مجلس وحت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ راجہ ناصرعباس کی اپیل پر ملک میں جاری شیعہ نسل کشی کیخلاف لاہور میں پریس کلب لاہور کے سامنے احتجاجی مظاہرہ ہوا جس کی قیادت علامہ امتیاز کاظمی سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین ضلع لاہور نے کی۔ مظاہرے میں مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی رہنما علامہ احمد اقبال رضوی، علامہ سید جعفر موسوی سمیت دیگر رہنماوُں نے شرکت کی۔ مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے علامہ سید جعفر موسوی کا کہنا تھا کہ پاکستان میں منظم منصوبہ بندی کیساتھ ہمارے خلاف محاذ بنایا جا رہا ہے کیونکہ دشمن کو یہ معلوم ہیں کی ملت جعفریہ کے ہوتے ہوئے پاکستان میں اُن کے مذموم عزائم کبھی کامیاب نہیں ہو سکتے، کراچی میں ہمارئے شہدا کے لہو سے تکفیریوں کیساتھ لسانی جماعت کے دہشت گردوں کے ہاتھ بھی رنگے ہوئے ہیں، ہم ایم کیو ایم (متحدہ قاتل مومنٹ) کو وارننگ دیتے ہیں کہ وہ ہمارے بلدیاتی امیدواروں کے قاتلوں کو قانون کے حوالے کریں بصورت دیگر دنیا بھر میں اُن کو رسوا کر دیا جائے گا۔
رہنماؤں نے کہا کہ پاکستان میں ملت تشیع کے ہزاروں افراد کو گزشتہ سال میں شہید کیا گیا نئے سال کے پہلے دو دن میں 6 شیعہ افراد شہید اور 36 سے زائد زخمی کیے لیکن آج تک ہمارے شہدا کے قاتلوں کا سراغ نہیں ملا۔ رہنماؤں کا کہنا تھا کہ ہم سمجھتے ہیں کہ ہمارے قاتل اس دور کے حکمران ہیں جن کے دور حکمرانی میں ہماری نسل کشی ہوئی، موجودہ دور کے حکمرانوں نے قاتلوں کو شیعہ نسل کشی کیلئے فری ہینڈ دے دیا ہے، ہم اب پاکستان کے حکمران، عدلیہ اور سلامتی کے دیگر اداروں سے نااُمید ہو گئے ہیں، اب ہم عالمی سطح پر پاکستان میں جاری شیعہ نسل کشی پر آواز اُٹھانے پر مجبور ہو گئے ہیں، ہمیں پاکستان بنانے کی سزا دی جا رہی ہیں۔ مظاہرین سے علامہ امتیاز کاظمی نے بھی خطاب کیا۔ انہوں نے کہا کہ ہزاروں پاکستانیوں اور سیکورٹی فورسز کے قاتل طالبان سے مذاکرات کو ہم مسترد کرتے ہیں، پاکستانی بزدل حکمرانوں کو اگر قوم کی سیکورٹی کا خیال نہیں تو عوام کو دفاع کا حق دیا جائے، بصورت دیگر وہ وقت دور نہیں جب ان مظلوم محب وطن عوام کے ہاتھ غاصب حکمرانوں کے گریبان تک پہنچیں۔
انہوں نے کہا کہ کوئٹہ میں زائرین امام رضا (ع) کو نشانہ بنانے والے ملک دشمن تکفیری درندوں کیخلاف صوبائی و وفاقی حکومت کا کوئی قدم نہ اٹھانا اس بات کی دلیل ہے کہ ان تکفیریوں کی سرپرستی کوئی اور نہیں ہمارے ہی ملک دشمن حکمران کر رہے ہیں، سیکورٹی ذرائع کے مطابق گزشتہ چار برسوں سے کراچی میں شیعہ مسلک سے تعلق رکھنے والے معتبرین، قومی و ملی شخصیات کے قتل عام میں ایم کیو ایم میں شامل تکفیری کارکن ملوث ہیں، جن کی نشاندہی بارہا خفیہ ادارے کر تے رہے ہیں، لیکن قانون نافذ کرنے والے اداروں نے ان دہشت گردوں کے خلاف کوئی کارروائی کی اور نہ ہی ایم کیو ایم کی قیادت نے اس پر کوئی سنجیدگی دکھائی، اس لسانی تکفیری دہشت گرد گروہ کے ہاتھوں اب تک شہید علامہ آغا آفتاب جعفری، شہید استاد پروفیسر سبط جعفر زیدی، شہید علامہ دیدار جلبانی، شہید عالم ہزارہ، شہید صفدر عباس، شہید علی شاہ سمیت بے شمار شخصیات کو نشانہ بنایا گیا جبکہ اب بھی مختلف علاقوں میں شیعہ تنظیمی شخصیات کو مسلسل جان سے مارنے کی دھمکیوں کا سلسلہ جاری ہے۔ مظاہرین دہشت گردی کیخلاف پلے کارڈ اٹھائے نعرہ بازی کرتے رہے بعد میں پرامن طور پر منتشر ہو گئے۔

Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button