پاکستانی شیعہ خبریں

ہنگو میں اسکول کے باہر خودکش حملہ، طالبعلم اعتراز حسن شہید

شیعہ نیوز (اسٹاف رپورٹر) ضلع ہنگو کے علاقے ابراہیم زئی میں طالبان خودکش ایک سکول پر حملہ کرنا چاہتا تھا۔ جسے ایک شیعہ اسٹوڈنٹ اعتراز حسن نے اپنی جان قربان کر کے ناکام بنا دیا۔ صدائے مظلومین کے رپورٹر کے مطابق خود کش حملہ آور سکول یونیفارم میں اسکول کے گیٹ پر پہنچا۔ اعتزاز حسن بھی گیٹ پر تھا۔ اس کو حملہ آور مشکوک لگا اس نے تفتیش کرنی شروع کر دی اور حملہ آور کو اسکول میں داخل نہیں ہونے دیا۔ حملہ آور سکول میں داخل نہ ہو سکنے کی وجہ سے خود کش مواد کو وہیں بلاسٹ کر دیا جس سے اعتزاز زخمی ہو گیا۔ اسے زخمی حالت میں ڈسٹرکٹ ہسپتال لایا گیا جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے شہید گیا۔ اعتراز حسن ولد مجید جس کی عمر 14 سال تھی اور وہ گورنمنٹ ہائی اسکول ابراہیم زئی کا اسٹوڈنٹ تھا۔ اس نے انتہائی جرات مندانہ اور بہادری کا مظاہرہ کرتے ہوئے خودکش حملہ آور کو سکول داخل ہونے سے روکا اور اس نے خود ایک مذہبی اور قومی ذمہ داری اداکرتے ہوئے اپنی جان جان آفرین کے سپرد کر دی۔دوسری جانب کالعدم لشکر جھنگوی کے ترجمان علی سفیان نے نامعلوم مقام سے میڈیا کو فون کرکے ہنگو اسکول پر خودکش حملہ کی ذمہ دار قبول کر لی ہے۔

Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button