اسلامی تحریکیںپاکستانی شیعہ خبریںہفتہ کی اہم خبریں

علامہ فضل عباس قمی کی جبری گمشدگی، شیعہ علماء کونسل کا حکومت کو 3 دن کا الٹی میٹم

شیعہ علماء کونسل کا علامہ فضل عباس قمی کی رہائی کیلئے حکومت کو 3 دن کا الٹی میٹم

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) شیعہ علماء کونسل پاکستان کے مرکزی رہنماء حافظ سید کاظم رضا نقوی نے حکومت کو خبردار کیا ہے کہ شیعہ کمیونٹی کیخلاف فی الفور انتقامی کارروائیاں بند کرکے لاپتہ افراد کو بازیاب کروایا جائے۔

شیخوپورہ میں پریس کانفرنس میں حافظ کاظم رضا نقوی کا کہنا تھا کہ جان بوجھ کر حالات کا رُخ بدامنی کی طرف موڑا جا رہا ہے، امن، اتحاد و یگانگت ہماری ترجیح ہے، جسے کمزوری نہ سمجھا جائے۔ اس موقع پر میاں افتخار حسین جالندھری، قاسم علی قاسمی، مولانا جعفر حسین سمیت دیگر رہنماء بھی موجود تھے۔

حافظ کاظم رضا نقوی نے کہا کہ اداروں کو ہوش کے ناخن لینا ہوں گے، بیگناہ افراد کی پکڑ دھکڑ کا سلسلہ بند کرنا ہوگا، ورنہ ہم قانون کے دائرے میں رہتے ہوئے احتجاج کا حق محفوظ رکھتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم حکومت کو الٹی میٹم دیتے ہیں کہ تین روز کے اندر اندر انجمن اسلامیہ مدینۃ العلم شیخوپورہ کے پرنسپل علامہ فضل عباس قمی کو رہا کیا جائے، اگر ان کو رہا نہ کیا گیا تو ہم راست اقدام پر مجبور ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کے اس رویئے کی وجہ سے قوم میں اشتعال پایا جا رہا ہے، حکومت اور ادارے اپنی پالیسیوں پر توجہ دیں اور ان پر نظرثانی کریں کہ ایک ہی فرقے کو کیوں امتیازی سلوک کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

یہ خبر بھی پڑھیں خانواداہ شیعہ مسنگ پرسن کا اپنے پیاروں کی بازیابی کے لیے کراچی پریس کلب پر احتجاج

شیعہ علماء کونسل لاہور کے صدر قاسم علی قاسمی کا کہنا تھا کہ شیعہ پاکستان کی پُرامن قوم ہے، ہم نے ہمیشہ جنازوں پر بھی کھڑے ہو کر ملک کے امن کی بات کی ہے، ہماری تاریخ گواہ ہے کہ ہم نے ہی یہ ملک بنایا تھا اور اس کے بچانے میں بھی ہمارا ہی خون شامل ہے، اس کے باوجود ملت جعفریہ کیساتھ امتیازی سلوک افسوسناک ہے۔ انہوں ںے کہا کہ علامہ فضل عباس قمی ایک معزز عالم دین ہیں، ان کو اس طرح گھر سے اٹھا کر لے جانا علماء کی توہین کے مترادف ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے وفاق المدارس کیساتھ طے کیا تھا کہ کسی عالم دین کیخلاف شکایت ہوگی تو وفاق المدارس کو اعتماد میں لے کر کارروائی کی جائے گی، مگر حکومت اپنے وعدے سے مُکر چکی ہے۔

Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button