مشرق وسطیہفتہ کی اہم خبریں

آل سعود نے ٹرمپ کی حمایت کا اعلان کردیا، مسلم امہ میں غصہ

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) سعودی عرب نے ایسے حالات میں امریکی دھمکی کے سامنے سر تسلیم خم کر لیا کہ جب پوری دنیا میں اس شرمناک ڈیل کے خلاف بڑے پیمانے پر احتجاج کا سلسلہ جاری ہے۔

عرب میڈیا کے مطابق سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے امریکی صدر کی جانب سے مشرق وسطیٰ میں اسرائیل اور فلسطین کے درمیان تنازع کے خاتمے کے لیے امن منصوبہ ڈیل آف سینچری پیش کرنے اور فریقین کے درمیان امریکی سرپرستی میں مذاکرات کو حوصلہ افزا قرار دیتے ہوئے ٹرمپ کی کاوشوں کو سراہا ہے۔

سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے اس حوالے سے فلسطین کے صدر محمود عباس سے ٹیلی فونک گفتگو میں اسرائیل اور فلسطین کے درمیان براہ راست مذاکرات پر زور دیا۔

سعودی وزرات خارجہ کی جانب سے جاری بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ سعودی فرمانروا نے ڈیل کے حوالے سے امریکی صدر کی کاوشوں کو سراہا ہے اور مسئلہ فلسطین کے حل کے لیے کی جانے والی تمام مثبت اور جامع کاوشوں کی حمایت کا یقین دلایا ہے۔

واضح رہے کہ سعودی عرب نے ایسے حالات میں امریکی دھمکی کے سامنے سر تسلیم خم کیا کہ جب پوری دنیا میں اس شرمناک ڈیل کے خلاف بڑے پیمانے پر احتجاج ہو رہا ہے اور فلسطین کے صدر محمود عباس نے واضح لفظوں میں اعلان کر دیا ہے کہ ٹرمپ کے امن منصوبے کو ہزار بار مسترد کرتے ہیں۔

سعودی عرب کی جانب سے امریکی صدر کے منصوبے کی حمایت سے اب واضح ہو گیا ہے کہ سعودی عرب امریکہ کے سامنے بے بس ہے اور جو امریکہ کہے بے چوں و چرا اسے تسلیم کرتا ہے۔

واضح رہے کہ صدر ٹرمپ نے واشنگٹن میں اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو سے ملاقات میں مشرق وسطیٰ امن منصوبہ پیش کیا جس میں اسرائیل اور فلسطین کو دو الگ ریاست بنا کر پیش کیا گیا ہے، مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیل کا اٹوٹ دارالخلافہ قراردیا ہے۔ فلسطینیوں نے اس ڈیل اور صدی معاملے کو مسترد کردیا ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button