مشرق وسطیہفتہ کی اہم خبریں

اگر امریکی بی 52 بمبار طیاروں نے فضائی حدود کی معمولی سی بھی خلاف ورزی کی تو تباہ کن جواب دیں گے: ایران

امریکہ کے بی 52 طیاروں کی جانب سے فضائی حدود کی معمولی سی بھی خلاف ورزی پر تباہ کن جواب دیا جائے گا۔

اسلامی جمہوریہ ایران کے ائرڈیفنس سسٹم کے ڈپٹی کمانڈر بریگیڈیرجنرل قادر رحیم زادہ نے ائرڈیفنس ہیڈکواٹر کے معائنے کے موقع پر اپنے ایک بیان میں کہا کہ ہماری فضائی حدود ہماری ریڈلائن شمار ہوتی ہے، انہوں نے کہا کہ ہمارا دشمن بھی اس بات سے اچھی طرح واقف ہے کہ ہماری فضائی حدود کی معمولی سی بھی خلاف ورزی کی صورت میں ا‏ئرڈیفنس سسٹم کی طرف سے شدید اور فوری جواب دیا جائے گا۔

بریگیڈیر جنرل رحیم زادہ نے علاقے سے باہر کی طاقتوں کی اس خطے میں نقل وحرکت کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ خطے اورخطے سے باہر کی طاقتوں کی ایک ایک حرکت پر ہماری گہری نظر ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ امریکہ کے بی 52 بمبار طیاروں کی پرواز‍وں کو ہم نے صرف 150 کلومیٹر کے فاصلے سے اپنی نظروں کے سامنے رکھا ہوا ہے، ہمارا ائرڈیفنس سسٹم پل پل کی خبر رکھتا ہے۔

واضح رہے کہ امریکہ کے بی 52 بمبار طیاروں نے خلیج فارس کے بعض ساحلی ملکوں خصوصا سعودی عرب کو حوصلہ دینے کے مقصد سے علاقے میں نمائشی پروازیں انجام دی ہیں۔

دفاعی امور کے مبصرین نے علاقے میں بی 52 طیاروں کی پروازوں کو امریکہ کے تزویراتی اقدامات میں سے قرار دیا ہے کہ جس کا ایک مقصد غدار عرب حکام پر یہ ظاہر کرنا ہے کہ وہ اکیلے نہیں ہیں اور دوسری جانب ان اقدامات کی مدد میں عرب حکام سے پیسہ اینٹھنا ہے۔

Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close