پاکستانی شیعہ خبریںہفتہ کی اہم خبریں

قاسم سلیمانی کی شہادت کے بعد بھی تعصب سروں پر سوار، شہر قائد کی شاہراہوں سے برسی شہید قاسم سلیمانی کی تشہیری بینرز غائب

سردارِ رشید ِ اسلام حاج شہید قاسم سلیمانیؒ اور ان کے رفقاء کی مرکزی مجلس برسی کے مناسبت سے شہر قائد کی مرکزی شاہراہوں پر آویزاں تشہیری بینرز راتوں رات اتار کر غائب کردیئے گئے۔ عالم اسلام کے عظیم سپہ سالار اور سردارِ مدافعین ِ حرم اہل بیت ؑ کی شخصیت سے ان کی شہادت کے بعد بھی تعصب یا خوف اب بھی سروں پر سوار ہے ۔

تفصیلات کے مطابق 23 جنوری 2021 بروز ہفتہ اما م بارگاہ شہدائے کربلا انچولی سوسائٹی میں منعقد شہید قاسم سلیمانی اور ان کے رفقاء سمیت شہدائے مچھ کوئٹہ کی یاد میں منعقدہ مرکزی مجلس عزا کے بینرز جوکہ شہر بھر کی مرکزی شاہراہوں پر آویزاں کیئے گئے تھے راتوں رات اتار کر غائب کردیئے گئے ہیں ۔

ذرائع کے مطابق حسن اسکوائر تا سفاری پارک تک یونیورسٹی روڈ پر بالائی گزرگاہوں پر لگائے گئے بینرز جن پر شہید قاسم سلیما نی ؒ کی تصاویر بھی نمایاں تھیں گزشتہ شب اتار کر غائب کردیئے گئے ہیں ۔ واضح رہے کہ سردار حاج قاسم سلیمانی ؒ پوری دنیا میں استعمار مخالف اور محافظ حرم ہائے اہل بیت ؑ کے عنوان سے جانے جاتے ہیں ۔

شہید قاسم سلیمانی ؒ نے شام وعراق میں اسلام دشمن داعش اور دیگر قوتوں کا راستہ روک کر انہیں جہنم واصل کرکے نافقط عراق اور شام کا دفاع کیا بلکہ داعش کے ناپاک وجود کو پاکستان اور خطے کے دوسرے ممالک کی جانب قدم بڑھانے سے بھی روکا ۔ شہید قاسم سلیمانی کو فلسطینی مقاومتی تنظیم حماس نے شہید راہ قدس کا لقب دیا۔

لیکن افسوس پاکستان میں موجود بعض متعصب عناصر چاہے وہ سیاسی ومذہبی لبادے میں ہوں یا ریاستی اداروں کے نامعلوم وجوہات کی بناء پر شہید قاسم سلیمانی ؒ کے وجود سے ان کی شہادت کے بعد بھی یا تو تعصب برتے ہیں یا خوف زدہ ہیں ۔

Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close