مشرق وسطی

برطانیہ، علاقائی ممالک میں مداخلت کو بند کرے۔ عباس موسوی

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) ایران نے برطانوی وزیر خارجہ کے حالیہ دعوے کے ردعمل میں کہا ہے کہ یہ برطانیہ کے مفاد میں ہے کہ وہ علاقائی ممالک کے معاملات میں مداخلت سے باز رہے۔

یہ بات ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان سید عباس موسوی نے جمعرات کے روز برطانوی وزیر خارجہ کے تکراری الزامات پر اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہی۔

انہوں نے کہا کہ برطانوی وزیر خارجہ کے ایسے بے بنیاد الزامات خطی تنازعات کے حل کے لئے ایرانی امن منصوبے کی کامیابی کی علامت ہے۔

موسوی نے کہا کہ برطانیہ دوسروں پر الزامات لگانے کے بجائے یمنی مظلوم عوام کے خلاف جنگ جو اقوام متحدہ نے اس کی تصدیق کی ہے، میں جارحیت کرنے والوں کے لئے ہتھیاروں کی فراہمی اور علاقائی مسائل کی مداخلت کو روک کرے۔

انہوں نے برطانیہ کی جانب سے آرامکو واقعے پر کوئی حقیقی دستاویزات کے بغیر ایران مخالف الزامات کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ برطانیہ یمنی جنگ کے جارحیت کرنے والوں کی حمایت کرتا ہے اور ان کے وزیر خارجہ کے بے بنیاد بیانات قابل قبول نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایرانی وزارت خارجہ نے راب کے ایران مخالف بے بنیاد الزمات کی مذمت کرکے یقین رکھتی ہے کہ اگر ایسے اقدامات کو روک نہیں کیا جائے تو دونوں ممالک کے درمیان دوطرفہ تعلقات کو خراب کیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق، برطانوی وزیر خارجہ دومینیک راب نے اس ملک کی پارلیمنٹ میں دعوی کیا کہ ایران ہمیشہ عالمی قوانین کی خلاف ورزی کرتا ہے۔

Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button