پاکستانی شیعہ خبریںہفتہ کی اہم خبریں

جہادالنکاح کرنے والی داعشی دلہن اور اس کے شوہرکا شرمناک کام

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) شام میں عالمی دہشتگرد تنظیم داعش کے دہشتگرد جنگجوؤں کی جنسی تسکین کیلئے دنیابھر سے وہابی و دیوبندی لڑکیوں اور خواتین کو بدنام زمانہ جہاد النکاح کا ٹائٹل لگا کر بھیجا گیا۔ان ہی خواتین میں سے ایک نو مسلم جرمن خاتون جینیفر ڈبلیو بھی ہے جس نے اپنے داعشی شوہر کے ساتھ مل کر شرمناک کام انجام دیا۔

اس داعشی دلہن اور اس کے شوہر نے ایک 5 سالہ بچی کو بھوکا پیاسا رکھ کر قتل کردیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق ایک جرمن عدالت نے ایک نو مسلم جرمن خاتون جینیفر ڈبلیو کو یزیدی قبیلے کی ایک 5 سالہ بچی کے قتل میں ملوث ہونے کے جرم پر سزائے قید سنا دی ہے۔ یہ جرمن خاتون اسلام قبول کرنے کے بعد دہشت گرد تنظیم دولتِ اسلامیہ المعروف داعش میں شامل ہو گئی تھی۔

جینیفر ڈبلیو کا ایک جرم ایک پانچ سالہ یزیدی بچی کو غلام بنا کر بھوکا اور پیاسا رکھنا ہے۔ اس اذیت کی وجہ سے اس بچی کا انتقال ہو گیا تھا۔

یہ خبر بھی پڑھیں استغفراللہ، سعودی عرب میں فحش کنسرٹ، ویڈیوز وائرل

عدالت میں استغاثہ کی جانب سے جو دستاویزی ثبوت جمع کرائے گئے ہیں ان کے مطابق یہ خاتون داعش کی مددگار ہونے کے ساتھ اقدام قتل کی کوششوں میں بھی شامل تھی۔ یہ خاتون جنگی جرائم اور انسانیت کے خلاف جرائم میں بھی ملوث رہی ہے۔

جینیفر ڈبلیو کو خاص طور پر اس الزام کا سامنا تھا کہ اس نے ایک پانچ سالہ یزیدی بچی کو غلام بنا کر رکھا اور اس بچی کی موت پیاس اور بھوک کی وجہ سے ہوئی۔ اس بچی کو جینیفر ڈبلیو کے شوہر نے زنجیروں میں بھی جکڑ کر مکان کے دالان میں ڈال دیا تھا۔ اس کا شوہر داعش کا ایک جنگجو تھا۔

استغاثہ نے عدالت کو بتایا کہ خاتون کے جنگجو شوہر نے بچی کو زنجیریں ڈال کر گھر کے دالان میں بغیر کسی مناسب حفاظت کے شدید گرمی میں چھوڑ دیا تھا۔ اس سارے عمل میں خاتون کی مرضی شامل تھی۔ اس بچی کو پانی دینے کے بجائے اس کے گدے (میٹرس )کو گیلا کر دیا جاتا تھا۔

جینیفر ڈبلیو کو جرمن حکام نے سن 2018 میں اس وقت گرفتار کیا جب وہ شام سے واپس اپنے ملک میں داخل ہونے کے لیے روانہ ہوئی تھی۔

Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button