دنیا

کابل یونیورسٹی پر مسلح دہشت گردوں کا حملہ، پچیس جاں بحق

شیعہ نیوز: افغانستان میں کابل یونیورسٹی پر اُس وقت مسلح افراد نے حملہ کردیا جب وہاں ایک کتاب کی رونمائی کی تقریب میں افغان اور ایرانی حکام موجود تھے۔

افغان میڈیا کے مطابق کابل یونیورسٹی دھماکوں اور فائرنگ کی آواز سے گونج اُٹھی، تین مسلح افراد نے مرکزی دروازے سے داخل ہوکر اندھا دھند فائرنگ کی اور بارودی مواد کے دھماکے کیے۔

مسلح دہشت گردوں کے حملے میں کم سے کم پچیس افراد جاں بحق اور متعدد دیگر زخمی ہوگئے جاں بحق اور زخمی ہونے والوں میں یونیورسٹی کے طلبا بھی شامل ہیں۔

افغان ذرائع کا کہنا ہے کہ یہ حملہ ایسی حالت میں ہوا ہے کہ افغانستان اور دیگر ملکوں کی اہم شخصیات یونیورسٹی میں کتب میلے کا افتتاح کرنے والے تھیں ابھی تک کسی نے اس حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے اور طالبان نے بھی اعلان کیا ہے کہ اس حملے میں ان کا کوئی ہاتھ نہیں ہے۔

کابل پولیس نے یونیورسٹی کا چاروں طرف سے گھیراؤ کر لیا ہے اور دو طرفہ فائرنگ کا تبادلہ کافی دیر جاری رہا۔ فائرنگ کی آواز سُن کر طلباء میں بھگدڑ مچ گئی اور طلبا نے جامعہ کی عقبی دیوار پھلانگ کر اپنی جانیں بچائیں۔

حملے کے وقت یونیورسٹی میں ایک کتاب کی رونمائی کی تقریب جاری تھی۔ تاحال ہلاکتوں اور زخمیوں سے متعلق کوئی اطلاع موصول نہیں ہوئی ہے تاہم ہلاکتوں کا خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے۔

یونیورسٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ کتاب کی رونمائی کی تقریب میں ایران اور افغان کے اعلیٰ سفارتی حکام بھی موجود تھے۔ حملے کی اطلاع کے بعد ایمبولینسوں کو کابل یونیورسٹی میں داخل ہوتے دیکھا گیا ہے۔

Tags
Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close