پاکستانی شیعہ خبریں

لاہور، ادارہ منہاج الحسینؑ میں ’’ذبیح منی و کربلا کانفرنس‘‘ کا انعقاد

شیعہ نیوز: ادارہ منہاج الحسین ؑجوہر ٹاؤن لاہور کے زیر اہتمام "ذبیح منی و کربلا (علیھما السلام) کانفرنس” منعقد ہوئی، جس میں مختلف مسالک کے جید علماء کرام و مشائخ عظام نے ’’فلسفہ شہادت اور ہماری ذمہ داریاں‘‘ کے عنوان سے اظہار خیال کیا۔ اس موقع پر آیت اللہ محسن الحکیمؒ، آیت اللہ سعید الحکیمؒ سمیت حکیم خاندان کے دیگر علماء و فقہاء کو خراج تحسین پیش کیا گیا۔ حوزہ علمیہ نجف اشرف عراق سے علماء کرام کا تین رکنی خصوصی وفد شریک ہوا۔ کانفرنس سے علامہ ڈاکٹر محمد حسین اکبر سرپرست اعلی ادارہ منہاج الحسین لاہور، علامہ شیخ ساجد رضا خان، علامہ عقیل اختر ترابی، علامہ نسیم عباس کاظمی، علامہ حسن رضا باقر، علامہ رائے ظفر علی، علامہ غلام مصطفیٰ نیئر علوی، علامہ رشید ترابی، علامہ حافظ کاظم رضا نقوی، مفتی شبیر انجم مدنی، پیر وقاص منور مجددی، محمد حسین گولڑوی، بیرسٹر معصومہ بخاری، فیاض گوندل ایڈووکیٹ سمیت مختلف طبقہ ہائے فکر کے جید علماء اور دانشور حضرات نے خطاب کیا۔

کانفرنس میں حضرت امیرالمومنین علی ابن ابی طالب علیہ السلام، سیدالشہداء امام حسین علیہ السلام ،حضرت ابوالفضل العباس علیہ السلام، حضرت امامین عسکریین علیہما السلام، حضرت عقیلہ بنی ہاشم زینب سلام اللہ علیہا کے روضہ ہائے مبارکہ پر لہرانے والے علم ہائے مبارک کی بھی خصوصی زیارت کرائی گئی۔ وطن عزیز کی سالمیت، علماء و مراجع کی طول عمر اور مرحومین کی بلندی درجات کیلئے بھی خصوصی دعا کرائی گئی۔ مقررین نے وحدت امت اور ذبیح منیٰ اور ذبیح کربلا قربانی حضرت اسماعیل ؑ اور قربانی امام حسین ؑ کے موضوع پر تفصیلی گفتگو کی اور امت کو وحدت کی لڑی میں پرونے اور زمانہ حاضر کی یزیدیت کے سامنے کردار حسینیؑ پیش کرتے ہوئے ڈٹ جانے کا پیغام دیا۔

علامہ ڈاکٹر محمد حسین اکبر کا کہنا تھا کہ کربلا کے شہیدوں کی قربانیوں کو یاد کرنا ہی ہماری زندگی کا مقصد ہونا چاہیے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہماری اولین ذمہ داری ہے کہ اہلبیتؑ کے نقش قدم پر چلتے ہوئے اپنی زندگی گزاریں۔ ذبیح منی و زبیح کربلا کانفرنس میں مومنین کی بڑی تعداد موجود تھی۔ کانفرنس کے شرکا نے شہداء کربلا کی قربانیوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے اپنی زندگیوں کو اہلبیتؑ کی تعلیمات کے مطابق گزارنے کا عزم کیا۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button