دنیا

پیس ناو: ٹرمپ کے دور میں اسرائیل کی آبادکاری میں اضافہ ہوا

شیعہ نیوز: انسانی حقوق کے گروپ ، پیس ناؤ نے کہا کہ ڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ نے آباد کاری کی تعمیر اور منصوبہ بندی میں اضافے کو بڑھایا اور مقبوضہ مغربی کنارے پر اسرائیل کے باضابطہ الحاق کی کوشش کی۔

’’پیس ناو نے سوموار کو اپنی ویب سائٹ پر کہا کہ ڈونلڈ جے ٹرمپ کے چار سال اقتدار میں رہنے کے بعد ، اسرائیلی بستیوں کے بارے میں امریکی پوزیشن میں دور رس تبدیلیاں رونما ہوئیں جنھوں نے دو ریاستوں کے حل کے آس پاس بین الاقوامی اتفاق رائے کو بکھر کر رکھ دیا ہے۔

اس میں روشنی ڈالی گئی کہ ’’گذشتہ چار سالوں کے مقابلہ میں بستیوں میں فروغ پانے والے منصوبوں کی تعداد میں 2.5 گنا اضافہ ہوا ہے –  2013-2016 کے 10،331 رہائشی یونٹوں کے مقابلے میں سال 2017-2020 کے دوران بستیوں میں 26،331 ہاؤسنگ یونٹوں کو ترقی دی گئی ،‘‘ بستیوں میں ٹینڈروں کی تعداد دوگنی ہوگئی – پچھلے چار سالوں میں 1،164 ہاؤسنگ یونٹوں کے مقابلے میں بستیوں میں 2،425 ہاؤسنگ یونٹوں کے لئے ٹینڈرز شائع کیے گئے تھے ۔

اس میں یہ بھی نشاندہی کی گئی ہے کہ اسرائیل نے ان چار سالوں کے دوران ایک  ملین آباد کاروں کو شامل کرنے کے لئے انفراسٹرکچر اور سڑک کے منصوبے انجام دیئے۔ ’’حالیہ برسوں میں ، اسرائیلی حکومت نے اربوں شیکل کی سرمایہ کاری سے بستیوں کے لئے ترقی کے محور کی تشکیل کے لئے بنیادی ڈھانچے اور سڑک کے منصوبے شروع کردیئے ہیں۔‘‘

 

Tags
Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close