دنیا

جنوبی افریقہ کے انجیلی چرچ کا اسرائیل کے بائیکاٹ کا اعلان

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) جنوبی افریقہ کے اینجلیکن چرچ (ACSA) کے سب سے زیادہ فیصلہ کن ادارہ نے’’اسرائیل‘‘ کے بائیکاٹ کا اعلان کرتے ہوئے اسرائیلی ریاست میں سرمایہ کاری روکنے کی مہم کی حمایت کا اعلان کیا ہے۔ انجیلی چرچ ر فلسطین پر اسرائیل کے ناجائز فوجی قبضے کے خاتمے کا مطالبہ کرتے ہوئے اسرائیلی ریاست پر پابندیاں عائد کرنے کا مطالبہ کیا۔

یہ فیصلہ جوہانسبرگ میں انجیلی چرچ کے تین سال بعد ہونے والے اجلاس میں کیا گیا۔ اس میں جنوبی افریقہ ، نامیبیا ، لیسوتھو ، سوازیلینڈ (سوازیلینڈ) ، موزمبیق ، انگولا اور سینٹ ہیلینا میں انجلی جماعتوں کے نمائندے شامل ہیں۔

بائیکاٹ کے فیصلے میں کہا گیا ہے کہ فلسطینی مقدسات کی موجودہ صورت حال کے پیش نظر عیسائی چرچ کو اس پر توجہ دینے کی ضرورت ہے۔ ہمیں اس سرزمین کو صہیونیوں کے رحم وکرم پرنہیں چھوڑنا چاہیے جس میں ہمارے جلیل القدر پیغمبر حضرت عیسیٰ کی یادیں وابستہ ہیں اور جہاں پرانہیں مصلوب کیا گیا۔

موجودہ اسرائیلی ریاست ’’اسرائیل‘‘ کو الجھانے اور صیہونیت کے سیاسی نظریہ اور یہودی مذہب کے مابین فرق کرنے کی اہمیت پر بھی زور دیاگیا۔

اس فیصلے میں ’’یہودیت پسندی‘‘ اور ’’اسلامو فوبیا‘‘ کی مذمت کی گئی اور جنوبی افریقہ میں فرقہ واریت اور مقبوضہ فلسطین میں جو کچھ ہورہا ہے اس کے درمیان مماثلت کو تسلیم کیا گیا۔ انجیلی چرچ کا کہنا تھا کہ فلسطینیوں کے خلاف اسرائیلی ریاست کے انتقامی حربوں کے بعض مظاہر ماضی میں جنوبی افریقہ میں نسل پرست نظام کے مظالم سے زیادہ خوفناک ہیں۔

چرچ نے کہا کہ فلسطینی قوم اپنا حق خود ارادیت، امن ، آزادی ، انصاف اور وقار چاہتی ہے۔ یہ فیصلہ اسرائیل پر بین الاقوامی قانون کی تعمیل کرنے اور ریاست فلسطین پر اس کے غیر قانونی قبضے کو ختم کرنے کے لئے دباؤ ڈالنے کی طرف اہم قدم ہے۔

Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button