پاکستانی شیعہ خبریںہفتہ کی اہم خبریں

لاپتہ افراد کی بازیابی کی تحریک کی بھرپور حمایت کرتے ہیں، سائرہ ابراہیم

شیعہ نیوز:مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین یوتھ ونگ کا اجلاس وحدت ہائوس گلگت میں ہوا۔ اجلاس میں آئی ایس او طالبات گلگت ڈویژن کی خواہران نے بھی شرکت کی۔ خواہر سائرہ ابراہیم کی زیر صدارت ہونے والے اجلاس میں پورے ملک بشمول جی بی کے اسیروں اور جبری گمشدہ افراد کی بازیابی کیلئے جاری تحریک کی مکمل حمایت کا اعادہ کیا گیا۔ اجلاس میں کہا گیا کہ ہمارا ہدف اور منزل ایک ہے، ہم سب زمینہ سازی امام زمانہ (عج) کا ہدف لے کر آگے بڑھ رہے ہیں۔ اس راستے میں جو بھی مشکل پیش آئے ہمیں قبول ہے۔ ملت کے جوان جن کو اس راستے پر چلتے ہوئے لاپتہ کر دیا گیا ہے، جو اپنے پیاروں سے دور اذیتیں جھیلُ رہے ہیں، ہم ان کے اور ان کے خانوادوں کے ساتھ کھڑے ہیں۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سائرہ ابراہیم نے کہا کہ آئی ایس او تربیت گاہ ہے، بالکل اس طرح جس طرح ایک ننھا بچہ ماں کی گود میں پروان چڑھتا ہے۔آئی ایس او بھی اس طرح تربیت دیتی ہے، تاکہ وہ فرد معاشرے کا کارآمد اور مفید شہری بن سکے اور سچ اور حق کے راستے پر گامزن ہوسکے۔

انہوں نے کہا کہ پورے ملک بشمول گلگت بلتستان کے اسیر اور جبری گمشدہ افراد کی بازیابی کے لیے اپنے قائد کے ہر حکم پہ لبیک کہتے ہوئے میدان عمل میں موجود رہینگے۔ اگر حکومت کی ہٹ دھرمی اسی طرح قائم رہی تو گلگت بلتستان کی غیور مائیں اور بہنیں بھی اپنی مظلوم بہنوں کا ساتھ دینے کے لیے سڑکوں پر نکل آئیں گی۔ حکومت کو جلد کوئی حکمت عملی اپنانی ہوگی اور لاپتہ بیگناہ افراد کو بازیاب کروانا ہوگا۔ آئی ایس او طالبات گلگت ڈویژن کی صدر محترمہ ہیرا روحانی نے کہا کہ معاشرہ اخلاقی پستی و زوال کی طرف جا رہا ہے۔ اس کو بچانے کے لئے ہم سب کو مل کر عملی جدوجہد کرنی ہوگی اور تربیت کے عمل کو مزید تیز کرنا ہوگا، تاکہ دشمن کا مقابلہ کرسکیں، جو کہ جدیدُ ہتھیاروں سے لیس ہے۔ انہوں نے کہا کہ آئی ایس او ایک روحانی و فکری تربیت کا بہترین پلیٹ فارم ہے، جہاں سے نظریاتی شخصیات نکھر کر سامنے آتی ہیں۔ اجلاس میں آئی ایس او گلگت کی سینیئر خواہر صاعقہ بتول بھی شریک تھیں۔

Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close