مشرق وسطیہفتہ کی اہم خبریں

حشد الشعبی کےجوان بغداد کے گرین سکیورٹی زون میں داخل ہو گئے

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ)امریکہ کے دہشت گرد فوجیوں کی جانب سے آدھی رات کو عراق کی عوامی تحریک حزب اللہ کے مرکزی دفتر پر دہشت گردانہ حملے کے بعد عراق کی عوامی فورس حشد الشعبی کے جوان بغداد کے گرین سکیورٹی زون میں داخل ہو گئے۔

عراقی ذرائع نے خبردی ہے کہ دہشتگرد امریکی فوجیوں نے چالیس بکتر بند گاڑیوں کے ہمراہ بغداد کے الدورہ علاقے میں قائم حزب اللہ عراق کے دفتر پر حملہ کرکےاس تنظیم کے تیرہ کمانڈروں اور جوانوں کو اغوا کر لیا۔ جس کے بعد الحشد الشعبی کے جوان بغداد کے انتہائی سیکورٹی والے علاقے گرین زون میں داخل ہوگئے۔

عراقی ذرا‏ئع کے اعلان کے مطابق الحشد الشعبی نے بغداد کے گرین زون میں داخل ہو کر دہشت گرد امریکی فوج کو خبردار کیا ہے کہ کہ اگر حزب اللہ کے اغوا کئے گئے کمانڈروں اور جوانوں کو رہا نہ کیا گیا تو وہ دہشت گرد امریکیوں کے خلاف ہمہ گیر جنگ شروع کردیں گے۔

استقامتی محاذ سے وابستہ سوشل میڈیا کے چینلوں پر بھی اعلان کیا گیا ہے کہ عراق کے تمام استقامتی گروہوں نے حزب اللہ عراق کے اراکین کو رہا کرنے کے لئے امریکہ کو چوبیس گھنٹے کی مہلت دی ہے ۔ عراق کے استقامتی گروہ اصحاب الکہف نے بھی خبردار کیا ہے کہ اگر حزب اللہ عراق کے اغوا کئے گئے اراکین کو رہا نہ کیا گیا تو بغداد میں امریکی سفارت خانے کو نشانہ بنایا جائے گا۔

بغداد کے سخت سیکورٹی والے الخضراء علاقے یا گرین زون میں امریکہ اور برطانیہ کے سفارت خانے اور اہم سرکاری دفاتر واقع ہیں۔ دہشتگرد گروہوں کے مقابلے میں عراق کی عوامی رضاکار فورس الحشدالشعبی کی کامیابیوں کے بعد امریکہ اور صیہونی حکومت نے عراق کے مختلف علاقوں میں الحشدالشعبی کے مراکز کو کئی بار اپنے حملوں کا نشانہ بنایا ہے اور اس طرح عراق میں دہشتگرد گروہوں کو ایک بار پھر دہشتگردانہ کارروائیاں تیز کرنے کے لئے اکسانے کی ناکام کوشش کی ہے۔

اس درمیان عراق کی تنظیم عصائب اہل الحق کے رہنما جواد الطلیباوی نے حزب اللہ عراق کے مرکز پر دہشتگرد امریکی فوجیوں کے حملے کو آگ سے کھیلنے کے مترادف اور اس کے نتائج کی بابت خبردار کیا ہے۔ عراقی پارلیمنٹ میں الحکمت پارٹی کے نمائندے حسن فدعم نے بھی کہا ہے کہ حزب اللہ عراق کے مرکز پر حملہ اور اس تنظیم کے کمانڈروں کا اغوا ایک اشتعال انگیز اقدام ہے اور اس کے اچھے نتائج نہیں نکلیں گے ۔ ٹوئٹر پر کچھ عرب صارفین نے بھی ” مجاہدین ہماری ریڈ لائن ہیں جیسے ہیش ٹیگ کے ذریعے رضاکار فورس حشدالشعبی کی حمایت کا اعلان کیا ہے۔

Tags
Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close