پاکستانی شیعہ خبریں

پشاور دھماکہ، حکومت نے طالبان کو عوام کے قتل عام کا لائسنس جاری کر دیا ہے، علامہ ناصر عباس جعفری

شیعہ نیوز(پشاور) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ ناصر عباس جعفری نے پشاور میں مسجد و امام بارگاہ میں ہونے والے خودکش حملے میں شہید ہونے والے آٹھ سے زائد پاکستانیوں کی شہادت پر گہرے غم اور دکھ کا اظہار کرتے ہوئے دہشت گردانہ کارروائی کی شدید مذمت کی ہے اور کہا ہے کہ ملک اور اسلام دشمن طالبان دہشت گردوں کے ساتھ مذاکرات کرنے والے پاکستان کے عوام کو بتائیں کہ آخر کتنے پاکستانیوں کا مزید خون درکار ہے اور آخر کتنے پاکستانیوں کے مزید قتل عام کے بعد امن قائم ہوگا۔ ایک بیان میں علامہ ناصر عباس جعفری نے مزید کہا کہ حکومت پاکستان نے مذاکرات کے نام پر طالبان دہشت گردوں کو پاکستانی شہریوں کے قتل عام کا لائسنس جاری کر دیا ہے اور ایک مرتبہ پھر پشاور ملت جعفریہ کے عمائدین کے خون سے مقتل گاہ بنا ہوا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ پشاور میں علی اصغر قزلباش کی شہادت کے بعد ولی اللہ پر حملہ کیا گیا اور پھر یکے بعد دیگرے تیسرے حملے میں ملت جعفریہ کے عمائدین کو خودکش دہشت گردانہ حملے کا نشانہ بنایا جانا خیبر پختونخوا حکومت کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے۔
علامہ ناصر عباس جعفری نے پشاور میں شب خون مارے جانے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے پاکستان کے ان تمام سیاسی و مذہبی بے غیرت قائدین سے سوال کیا ہے کہ وہ بتائیں کہ آخر مملکت خداداد پاکستان میں کب تک خون کی ہولی کھیلی جاتی رہے گی اور ملک دشمن و اسلام دشمن طالبان دہشت گردوں کے ساتھ مذاکرات کے نام پر پاکستانیوں کو موت کی نیند سلایا جاتا رہے گا۔ انہوں نے مزید کہا کہ حکمرانوں کی اپنی اولادیں ملک سے باہر عیش و عشرت کی زندگیاں بسر کر رہی ہیں جبکہ پاکستان کے بیٹوں کو طالبان دہشت گردوں کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا۔ علامہ ناصر عباس جعفری نے خیبر پختونخوا اور وفاقی حکومت کو متنبہ کرتے ہوئے کہا کہ ملک اور اسلام دشمن طالبان دہشت گردوں کے ساتھ مذاکرات کے بجائے فی الفور فوجی کاروائی عمل میں لائی جائے، ورنہ وہ وقت اب دور نہیں کہ پاکستان کے عوام کے ہاتھ حکمرانوں کے گریبانوں تک جا پہنچیں گے۔

Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button