پاکستانی شیعہ خبریں

مجلس وحدت مسلمین کے زیر اہتمام کوئٹہ میں بھی اینٹی طالبان احتجاج کیا گیا

شیعہ نیوز (کوئٹہ) مجلس وحدت مسلمین کے زیراہتمام جمعۃ المبارک کو پورے پاکستان کی طرح کوئٹہ میں بھی یوم مذمت طالبان اور ٹارگٹ کلنگ کیخلاف احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ احتجاجی مظاہرے سے ایم ڈبلیو ایم کوئٹہ ڈویژن کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل علامہ ولایت حسین جعفری نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج طالبان سمیت دہشت گرد عناصر پاکستان کے لئے تباہی کا سامان ہیں۔ یہ تمام دہشت گرد اور کالعدم تنظیمیں غلط خارجہ پالیسی کا نتیجہ ہیں۔ جس کی وجہ سے مملکت خداداد پاکستان شدید خطرات سے درچار ہے۔ اب تو یہ بات روز روشن کی طرح عیاں ہوچکی ہیں کہ یہی دہشت گرد اسلام و پاکستان دشمن عناصر کے ہاتھوں میں کھیل رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ دہشت گرد عناصر پاکستان کے انتہائی حساس مقامات، فوج اور عوام کو نشانہ بنا چکے ہیں۔ لہٰذا یہ مفسد فی الارض اور باغی ہیں۔ شریعت اور عقل کی رو سے ان کے خاتمے میں ہی پاکستان کی بقاء اور امن کی ضمانت ہے۔ امریکی، اسرائیلی و دیگر شیطانی طاقتوں کی ایماء پر یہ دہشت گرد اسلام کو دنیا میں کمزور کرنے کی ناکام کوششوں میں مصروف عمل ہیں۔ ان کو پاکستان اور مسلمان پاکستانی عوام کے جان و مال کی کوئی پروا نہیں اور آئین پاکستان کو نہیں مانتے تو اس صورت میں ان کے خاتمہ کیلئے پاکستانی حکومت بھرپور طاقت کا استعمال کرے۔ ورنہ یہ اسلام اور پاکستان دشمن عناصر ہلاکت کا باعث ہونگے۔ اس صورتحال میں پاکستان بھر کے سنی شیعہ عوام کسی بھی صورت خاموش تماشائی بن کر نہیں رہ سکتے ہیں۔ جس کا مظاہرہ پچھلے چند مہینوں سے ہوتا چلا آرہا ہے اور پاکستانی عوام حکومتی کوتاہی کی صورت میں خود میدان میں نکل کر ان دہشت گردوں کو رسواء کرکے ان کا خاتمہ کرینگے۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان میں بلکہ پوری دنیا میں مسلمانوں میں کسی بھی قسم کی فرقہ واریت نہیں اور امت مسلمہ پوری طرح اتحاد بین المسلمین دائرے میں زندگی گزار رہی ہے، لیکن اسلام دشمن عناصر اپنے لے پالک دہشت گردوں کے ذریعے مسلمانوں میں انتشار کا باعث بنے ہوئے ہیں۔ ہم حکومت وقت سے نہایت سختی کے ساتھ مطالبہ کرتے ہیں کہ ان کے خلاف بھرپور آپریشن کرکے ان کا قلع قمع کرے۔ یہی پاکستانی اٹھارہ کروڑ عوام کا مطالبہ ہے اور پاکستان کے بقاء کا ضامن بھی۔ مجلس وحدت مسلمین دہشت گردوں کے خلاف آپریشن میں حکومت پاکستان اور فوج کی بھرپور حمایت کرتی ہے اور ہم اس میدان میں ان کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں۔

Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button