پاکستانی شیعہ خبریںہفتہ کی اہم خبریں

یوم پاکستان پریہ عہد کرنا ہوگا کہ مل کر پاکستان کو ترقی یافتہ بنائینگے

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) سربراہ شیعہ علماء کونسل پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے 23 مارچ یوم تجدید عہد کے موقع پر کہا کہ ملک کو مستحکم کرنے کیلئے مربوط حکمت عملی مرتب کی جائے، عوام کو ایسا پاکستان چاہیے جس کے مقاصد قائداعظم نے تعین کئے، عوام کو ایسا پاکستان چاہیے جس میں ان مقاصد سے انحراف نہ کیا گیا ہو،.

انہوں نے کہا کہ 75 سالوں میں پاکستان میں آئین کا حشر کیا ہوا؟ رول آف لا کی کیا کیفیت ہے؟ جمہوریت کی صورتحال اور شہری حقوق کی کیا کیفیت ہے اور معاشی حوالے سے کیا حقائق ہیں؟ انہوں نے کہا کہ ملک کو تمام چیلنجز سے نکالنے کی مربوط حکمت عملی مرتب کی ضرورت ہے، داخلی و خارجی مسائل کے حل کیلئے مربوط اور مضبوط لائحہ عمل کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کے قیام کے اغراض و مقاصد میں اسلامی معاشرے کا قیام، اسلامی جمہوری نظام کا نفاذ، مسلم تہذیب و ثقافت کی ترقی، اردو زبان کا تحفظ و ترقی، سیاسی و معاشی ترقی اور پرُامن فضا کا قیام شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ قرارداد پاکستان جہاں عوام کو وطن دوستی اور حب الوطنی کی طرف متوجہ کرتی ہے وہاں آئین کی بالادستی، قانون پر عملداری اور جمہوریت و انصاف جیسی ذمہ داریوں کی طرف رہنمائی کرتی ہے۔

یہ خبر بھی پڑھیں ارض پاکستان کے حصول کا مقصد آزاد مملکت کا قیام تھا

ان کا کہنا تھا کہ ہم ایسے وقت میں یوم پاکستان منارہے ہیں جب ملک کو بے شمار داخلی، خارجی مسائل کا سامنا ہے، خطے کی صورتحال تبدیل ہورہی ہے، عالمی سطح پر بڑی تبدیلیاں رونما ہورہی ہیں جبکہ ایک عالمی وبا نے پاکستان سمیت پوری دنیا کو جکڑ رکھا ہے، ان تمام چیلنجز سے نمٹنے کے لیے اسی جذبے اور ولولے کی ضرورت ہے جو تحریک پاکستان کے وقت تھا جب کسی قسم کے تعصبات نہیں تھے، آج بھی شر پسند قوتوں سے خبردار رہتے ہوئے آگے بڑھنا ہوگا جو ملک میں تعصب، انتہا پسندی اور شدت پسندی کو ہوا دیتی ہیں۔

علامہ ساجد نقوی نے کہا کہ پاکستان کو لاحق تمام داخلی و خارجی خطرات اور امراض کا علاج یہی ہے کہ عوام بیدار، متحد اور منظم ہوں، انہوں نے مزید کہا کہ ہمیں اس عظیم دن یہ عہد کرنا ہوگا کہ مل کر پاکستان کو ترقی یافتہ بنا ئینگے اور کورونا جیسے چیلنجز کا مقابلہ کرینگے، بدامنی، لاقانونیت، شہری آزادیوں کی بندش، مہنگائی اور دیگر عوامی مشکلات حل کر نے کی ذمہ داری ادا کریں گے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button