پاکستانی شیعہ خبریںہفتہ کی اہم خبریں

سعودی عرب میں ایک اور شیعہ جوان کو پھانسی دے دی گئی

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) سعودی عرب کی ظالم عدالت نے ایک اور جوان کو شیعہ ہونے کے جرم میں پھانسی دے دی۔

تفصیلات کے مطابق سعودی عرب کے شیعہ نشین علاقےقطیف میں کئی سال سے بلا جواز جیل کی صعوبتیں برداشت کرنے والے شیعہ نوجوان مسلم بن محمد المحسن کو ظالم سعودی عدالت نے پھانسی دے دی۔

سعودی عرب کے ٹیلی ویژن چینل 24 کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب کی عدالت نے حکومت مخالف تحریک چلانے کے جھوٹے الزام میں شیعہ نوجوان مسلم بن محمد المحسن کو پھانسی دے دی۔

مسلم بن محمد المحسن کو شیعہ نشین شہرقطیف کے العوامیہ علاقے سے 2015 میں گرفتار کیا گیا تھا۔

ہ خبر بھی پڑھیں کربلا زندہ معجزہ، اربعین پر کروڑوں کے اجتماع میں کورونا سے کوئی انتقال نہیں ہوا

سعودی عرب کی وزارت داخلہ نے اس نوجوان کو سیاسی بنیاد پر جیل میں ڈال کر پھانسی دے دیاور اس پر اسلحہ رکھنے اور مسلح جدوجہد کرنے کے بے بنیاد اور من گھڑت الزامات عائد کئے۔ تاہم ان کے والدین نے ان الزامات کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کا بیٹا بے گناہ تھا۔

واضح رہے کہ سعودی عرب کی تقریبا15 فیصد آبادی شیعہ مسلمانوں پر مشتمل ہے جو زیادہ تر صوبہ الشرقیہ میں رہتےہیں۔

سعودی حکومت، شیعہ مسلمانوں، سیاسی قیدیوں اور خاندانی آمریت کے مخالفین کو دہشت گردی سمیت مختلف قسم کے بے بنیاد الزامات کے تحت تختہ دار پر لٹکا دیتی ہے۔

انسانی حقوق کی تنظیمیں اور عالمی ادارے سعودی عرب میں آزادی بیان، سزائے موت اور انسانی حقوق کے کارکنوں کی سرکوبی پر تنقید کرتے رہے ہیں۔ انسانی حقوق کے عالمی اداروں کا کہنا ہے کہ سعودی حکومت دنیا میں انسانی حقوق پامال کرنے والی سب سے بڑی حکومت ہے۔

Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button