پاکستانی شیعہ خبریںہفتہ کی اہم خبریں

طالب علم سے بدفعلی کی ویڈیو اصلی یا جعلی، فرانزیک رپورٹ میں بڑا انکشاف

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) لاہور کے مدرسے منظور الاسلام کے طالبعلم کیساتھ مفتی عزیزالرحمان کی جانب سے بدفعلی کا کیس، فرانزک سائنس ایجنسی نے مدعی صابر شاہ کی جانب سے پیش کی گئی بدفعلی کی ویڈیو درست قرار دیدی۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ویڈیو اصلی ہے، اس میں کسی قسم کی کوئی ایڈیٹنگ نہیں کی گئی۔ یہ ویڈیو مدعی مقدمہ طالبعلم صابر شاہ نے پولیس کے حوالے کی تھی۔

مفتی عزیزالرحمن اور اس کے6 بیٹوں کیخلاف تھانہ شمالی چھاونی میں مقدمہ درج ہے۔ مفتی عزیزالرحمان اور اس کے تین بیٹے جیل میں ہیں جبکہ تین بیٹے عبوری ضمانت پر ہیں۔ مفتی عزیز الرحمٰن اور ان کے بیٹوں کو تعزیرات پاکستان کی دفعہ 377 (غیر فطری جنسی عمل) اور 506 (سنگین دھمکیاں دینے) کے تحت گرفتار کیا گیا۔

مفتی عزیزالرحمن پر الزام ہے کہ وہ تین سال سے طالبعلم کو بدفعلی کا نشانہ بنا رہے تھے، جبکہ مفتی عزیزالرحمان نے ویڈیو کو سازش قرار دیتے ہوئے موقف اختیار کیا تھا کہ انہیں نشہ آور مشروب پلا کر سازش کے تحت ویڈیو بنائی گئی ہے۔

دوسری جانب مفتی عزیزالرحمن نے پولیس کی حراست میں اپنے جرم کا اعتراف کرتے ہوئے کہا تھا کہ ان سے غلطی ہوئی ہے، وہ اپنے گناہ پر شرمندہ اور خدا کی بارگاہ میں توبہ و مغفرت کے طلب گار ہیں۔ دوران تفتیش عزیز الرحمٰن نے پولیس کو یہ بھی انکشاف کیا کہ وہ ویڈیو وائرل ہونے کے بعد طالبعلم سے صلح کی کوشش بھی کرتے رہے اور اس کے والدین کو اس سلسلے میں لاہور بلایا، لیکن چونکہ پولیس انہیں ڈھونڈتی پھر رہی تھی، اس لیے وہ چھپ گئے اور لڑکے کے والدین سے ملاقات نہیں ہوسکی۔

Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close