پاکستانی شیعہ خبریں

کربلا حسینیوں کا مکتب و درسگاہ ہے، علامہ راجہ ناصر عباس

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ)علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ حضرت امام حسینؑ نے اپنے پختہ عزم، ارادے اور حکمت کے ساتھ کربلا کو وجود بخشا ہے، جو آج تک اور قیامت تک تمام حریت پسندوں مواحدوں، غیرت مندوں، شریفوں اور بہادورں کے لئے مکتب بن گیا ہے اور اسی مکتب و فکر کے پیروکار زمانے کے فرعونوں، یزیدوں اور طاغوتوں سے ٹکرائے ہیں۔

زرائع کے مطابق اسلام آباد کے علاقے شکریال میں عشرہ مجالس کی تیسری مجلس سے خطاب کرتے ہوئے وحدت مسلمین پاکستان کے سیکریٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نےکہا کہ عظمت امام حسینؑ ہماری فکر سے بالاتر ہے۔ اللہ کے نبیﷺ، امام حسینؑ سے عشق کرتے تھے۔ آپ ﷺ نے فرمایا کہ جو بھی شخص میرے حسینؑ سے محبت رکھے گا، اللہ کا محبوب ٹہرے گا، اللہ کے نبیﷺ خبر دے رہے ہیں، یا دعا، اگر نبی نے دعا دی ہے تو مستجاب بھی ہو گی، اگر خبر دی ہے تو حق ہے۔ حضرت امام حسینؑ نے اپنے پختہ عزم، ارادے اور حکمت کے ساتھ کربلا کو وجود بخشا ہے، جو آج تک اور قیامت تک تمام حریت پسندوں مواحدوں، غیرت مندوں، شریفوں اور بہادورں کے لئے مکتب بن گیا ہے اور اسی مکتب و فکر کے پیروکاروں نے زمانے کے فرعونوں، یزیدوں اور طاغوتوں سے ٹکرا کر ثابت کیا ہے کہ فکر امام حسین (ع) کے پیروکار کبھی بھی ظالم کے سامنے نہیں جھکیں گے۔

علامہ راجا ناصر عباس جعفری نے اپنے خطاب میں مزید کہا کہ اکسٹھ ہجری کے بعد کربلا انہی پیروان حسینی ؑ کا مکتب و درس گاہ بن گئی ہے۔ انہوں نے اپنے خطاب میں کہا کہ کربلا کا عظیم واقعہ بہت اہمیت کا حامل ہے، اسے سمجھنے کی ضرورت ہے، کربلا کا واقعہ بہت وسعتیں لئے ہوئے ہے۔ طول تاریخ میں ہونی والی جنگیں طاقت و دولت اقتدار کے حصول کے لئے لڑی گئیں لیکن کربلا کا معرکہ ان سب سے مختلف ہے۔ کربلا کیوں بپا ہوئی۔؟ امام حسینؑ اپنی وصیت میں فرماتے ہیں، میں خواہشات نفسانی کی خاطر نہیں نکلا ہوں اور نہ کسی قوم قبیلہ کے جھگڑے کے لئے یا فساد پھلانے کے لئے نکلا ہوں بلکہ میں اپنی ناناکی امت کی اصلاح کے لئے نکلا ہوں۔ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے اپنے خطاب میں مظلومین جہاں بالخصوص کشمیر، یمن اور فلسطین کے مظلومین کو یاد کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر کے مسلمان اسوہ شبیری پر عمل کرتے ہوئے غاصب انڈیا کے سامنے ڈٹ جائیں اور انشااللہ کامیابی انکا مقدر ٹھہرے گی۔

Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button