دنیا

نریندر مودی کو ایوارڈ دینے پر بل گیٹس فاؤنڈیشن کی رکن مستعفی

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کوایوارڈ دیے جانے کے خلاف بل گیٹس فاؤنڈیشن کی اہم رکن احتجاجاً مستعفیٰ ہوگئیں۔

رپورٹ کے مطابق گیٹس فاؤنڈیشن کی کشمیر سے تعلق رکھنے والی کمیونیکیشن اسپیشلسٹ صبا حامد نے بل گیٹس فاؤنڈیشن کی جانب سے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کو ایوارڈ دینے پر احتجاجاً ملازمت سے استعفیٰ دے دیا۔

صبا حامد کا کہنا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں لاک ڈاؤن اور پابندیوں سے انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں کی جا رہی ہیں، مودی حکومت کے اقلیتوں سے روا بدترین سلوک کے باوجود مودی کو ایوارڈ دیے جانے پر بےحد افسوس ہے۔

یاد رہے کہ فاؤنڈیشن نے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کو بھارت میں حفظان صحت کی صورتحال بہتر بنانے کیلئے اقدامات کرنے پر ایوارڈ سے نوازنے کا فیصلہ کیا تھا۔

فاؤنڈیشن کے مطابق بھارتی وزیراعظم کو یہ ایوارڈ ان کے ’’صاف بھارت مشن‘‘ پروگرام کی بناء پر دیا گیا ہے جس کے تحت بھارت بھر میں لاکھوں ٹوائلٹس بنائے گئے ہیں۔

بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کو ایوارڈ سے نوازنے کے اعلان پر امریکی سافٹ ویئر کمپنی مائیکروسافٹ کے بانی بل گیٹس کی فلاحی تنظیم کو شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

اس حوالے سے جنوبی ایشیا و امریکی دانشوروں، وکلاء اور سماجی کارکنوں کی جانب سے ایک پٹیشن بھی فائل کی گئی تھی جس میں گیٹس فاؤنڈیشن سے مطالبہ کیا گیا تھا کہ وہ اپنے فیصلے پر نظر ثانی کرے کیوں کہ جس شخص کو وہ ایوارڈ دینا چاہتے ہیں اس کے دور حکومت میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں کی جارہی ہیں۔

تاہم بھارتی وزیراعظم مودی کو بل گیٹس فاؤنڈیشن کا اینول گول کیپر ایوارڈ دے دیا گیا جس پر احتجاج کرتے ہوئے بل گیٹس فاؤنڈیشن کی رکن نے استعفیٰ دے دیا۔

علاوہ ازیں چند افراد نے اس تقریب میں شرکت کرنے سے بھی انکار کر دیا تھا۔

خیال رہے کہ گزشتہ دنوں متحدہ عرب امارات اور بحرین نے بھی مودی کو سول ایوارڈز سے نوازا تھا جس پر پاکستان سمیت کئی ممالک کی سول سوسائیٹیز کی جانب سے خاصی تنقید کی گئی تھی۔

یاد رہے کہ گذشتہ 5 سالوں میں 6 مسلم ممالک بحرین، متحدہ عرب امارات، فلسطین، افغانستان، سعودی عرب اور مالدیپ، بھارتی وزیراعظم کو ایوارڈز سے نواز چکے ہیں۔

Tags
Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close