مشرق وسطی

امریکی انٹیلیجنس نے شام میں عام شہریوں کے قتل عام کا اعتراف کر لیا

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) امریکی انٹیلیجنس کے سابق اور موجودہ عہدے داروں نے اعتراف کیا ہے کہ انہوں نے داعش کے خلاف جنگ کے بہانے شام میں عام شہریوں کا قتل عام کیا ہے۔

فارس نیوز کے مطابق امریکی انٹیلیجنس کے بعض موجودہ اور سابق عہدے داروں نے نیویارک ٹائمز کو بتایا ہے کہ امریکی فوج میں موجود ایک خفیہ یونٹ نے کہ جو انکے بقول شام میں داعش کے خلاف جنگ میں سرگرم عمل رہا، بارہا شام کے عام شہریوں کو نشانہ بنا کر قتل کیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق ٹیلن آنویل نامی ایک خفیہ دستہ دوہزار چودہ سے دوہزار انیس کے مابین بظاہر شام میں داعشی دہشتگردوں کے خلاف سرگرم عمل تھا، مگر اس خفیہ دستے کے خونخوار امریکی دہشتگردوں نے بارہا شام کے عام شہریوں منجملہ کھیتوں میں کام کر رہے کسانوں، راستہ چل رہے بچوں اور جنگ سے تنگ آکر محفوظ مقامات کی تلاش میں سرگرداں شامی کنبوں کو جان بوجھ کر قتل کیا ہے۔

دوہزار سولہ سے دوہزار اٹھارہ کے مابین اس خفیہ دستے میں سرگرم امریکی فضائیہ کی انٹیلیجنس کے ایک سابق افسر نے نیویارک ٹائمز کو بتایا کہ یہ دستہ اپنے کام میں بڑے بے رحمانہ اور کارآمد انداز میں مہارت رکھتا تھا مگر اس نے بڑی تعداد میں برے حملے بھی کئے ہیں۔

خیال رہے کہ حالیہ برسوں میں شام میں موجود امریکی دہشتگردوں کے خلاف شامی عوام کی نفرت و ناراضگی میں شدت پیدا ہوتی جا رہی ہے اور گزشتہ چند ماہ کے دوران شام کے مختلف علاقوں میں عوام نے اپنے علاقے میں گشت کر رہے امریکی دہشتگردوں کا راستہ روک کر انہیں الٹے پاؤں واپس جانے پر مجبور کر دیا ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button