انٹرنیٹ معطل، سید علی گیلانی اور میرواعظ بین الاقوامی کانفرنس سے ویڈیو خطاب نہ کرسکے

  • بدھ, 06 فروری 2019 18:33

شیعہ نیوز(پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) مقبوضہ کشمیر کے ضلع سرینگر کے شمالی اور جنوبی حصوں میں کل دوپہر موبائل نیٹ ورک اچانک ٹھپ ہونے سے سراسیمگی کا ماحول پیدا ہوا تاہم شام دیر گئے نیٹ ورک بحال ہوا اور لوگوں نے راحت کی سانس لی۔ اس اچانک بریک ڈاؤن کے بارے میں باوثوق ذرائع نے بتایا کہ 5 فروری کو بین الاقوامی سطح پر یوم یکجہتی کشمیر منائے جانے کے سلسلے میں پاکستان اور برطانیہ سمیت کئی ممالک میں کانفرنسوں کا انعقاد کیا گیا تھا، جن میں مزاحمتی قائدین سید علی گیلانی اور میرواعظ عمر فاروق کے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے خطابات بھی طے تھے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ دونوں لیڈروں کے ممکنہ خطابات پر قدغن لگانے کے لئے انتظامیہ نے شمال اور جنوبی سرینگر میں تقریباً 250 موبائل ٹاوروں کی سگنل منقطع کردی۔

موبائل کمپنیوں کے ذرائع نے بتایا کہ انہیں دوپہر کے بعد یہ ہدایات دی گئیں کہ رام باغ سے سرینگر کے جنوبی علاقوں اور خانیار سے درگاہ کے شمالی علاقوں کا موبائل نیٹ ورک بند کردیا جائے، جس پر کمپنیوں نے عمل درآمد کرکے ٹاوروں کی سگنل منقطع کردی۔ واضح رہے کہ سید علی شاہ گیلانی کی رہائشگاہ جنوبی سرینگر اور میرواعظ عمر فاروق کی رہائشگاہ شمالی سرینگر کے علاقوں میں آتی ہیں۔ اس دوران شہر میں موبائل نیٹ ورک بشمول ریلائنس جیو، ایئرٹیل، بی ایس این ایل، ووڈا، آئیڈیا سمیت دیگر کمپنیوں کے صارفین پریشانیوں میں مبتلاء ہوگئے۔ عموما کسی علاقے میں جنگجو مخالف کارروائیوں یا پُرتشدد مظاہروں کے پیش نظر موبائل و انٹرنیٹ خدمات منقطع کردی جاتی ہیں۔

اس دوران حریت ذرائع نے اس بات کی تصدیق کی کہ مزاحمتی لیڈران سید علی گیلانی اور میرواعظ عمر فاروق کو ان بین الاقوامی کانفرنسوں میں ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے خطاب کرنا تھا لیکن موبائل و انٹرنیٹ خدمات معطل ہونے کی وجہ سے وہ ایسا نہ کرسکے۔ واضح رہے کہ یہ اپنی نوعیت کا پہلا موقع ہے جب مزاحمتی لیڈران بین الاقوامی کانفرنسوں میں ٹیلی خطاب کرنے سے روکے گئے۔

Leave a comment

Make sure you enter all the required information, indicated by an asterisk (*). HTML code is not allowed.